Faqar O mohabbat Hearth touching urdu story

0
317

Faqar O mohabbat Hearth touching urdu story

فقر و محبّت

اس نے پوچھا کیا میں کبھی تم سے مل سکتا ہوں ۔ پھر کہا
کہ کیا تمہارا دل نہیں کرتا کہ مجھ سے مل کر میرے سامنے بیٹھ کر باتیں کیا کرو ۔
میں نے کہا کہ پہلے مجھ کو چند سوالوں کے جواب دے دو ۔ کہنے لگا ہاں پوچھو ۔ میں نے کہا کبھی دربار دیکھا ہے ۔ جواب آیا ہاں دیکھا ہے میں نے کہا وہاں کے مجاور کو دیکھا ہے کبھی غور سے کہنے لگا ہاں میں نے پوچھا کیا دیکھا اس میں ۔ غیر متوقع اس نے کہا بناوٹ سو فیصد بناوٹ دھوکہ میں نے کہا سچ کہا ۔ 
پھر میں نے پوچھا وہا کے عقیدت مندوں کو دیکھا ہے کبھی جواب آیا ہاں میں نے کہا کیا پایا ان میں کہنے لگا وہ بھی سب مصنوعی میں نے کہا نہیں مصنوعی نہیں سچ لیکن وقتی سچ عارضی جذبہ وہ عقیدت مقدار میں ان کی ضرورت کے برابر ہوتی ہے ۔
پھر سوال کیا کبھی بھکاریوں کو دیکھا ہے وہاں خیر دیکھا ہو گا یہ بتاؤ ان میں کیا پایا کہنے لگا ان کا پیشہ ہے میں نے کہا صحیح ۔
پھر پوچھا کبھی کسی مجذوب کو دربار میں دیکھا ہے جواب آیا ہاں میں نے پوچھا وہ تو رب سے رابطے میں ہوتا درد سے تکلیف سے آزاد پھر وہ وہاں کیوں جاتا ہے اس نے تھوڑے توقف سے کہا کہ اس کو کہیں اور جگہ نہیں ملتی میں نے کہا سچ ۔
میں نے کہا اچھا ایک آخری سوال بولا پوچھو میں نے پھر اس سے پوچھاکہ کہ کبھی کسی فقیر کو دربار کے اندر دیکھا ہے کہنے لگا بہت میں نے کہا کہ جھوٹ بول رہے ہو فقیر کو دربار سے کیا لینا دینا ۔
پھر میں نے کہا جانتے بھی ہو فقیر کیا ہوتا ہے کہنے لگا تم بتا دو ۔
میں نے کہا
ف سے فاقہ
ق سے قناعت
ی سے یاد
ر سے رب
فقیر تمھیں دربار کے اندر مل ہی نہیں سکتا اس کا مصنوعی پن، جھوٹ، پیشہ ور ہونے یا کسی بھی درد تکلیف ضرورت سے کیا تعلق وہ یار کے حوالے اور یار اس کے اندر اسے وسیلوں کی کیا ضرورت ٹھکانوں کی کیا ضرورت پھر کہنے لگا پر میرا سوال تو وہیں رہ گیا
تمھارا دل نہیں کرتا مجھ سے سامنے بیٹھ کر باتیں کرنے کو
میں نے کہا مجھے محبت میں وسیلوں کی کیا ضرورت محبت مجھ میں اور میں محبت میں ۔
مجھے ایسی قبروں سے کیا جہاں کوئی بھی آئے اور چلا جائے ۔
اس کو جواب مل چکا تھا ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here