ISHQ E RASOOL صلى الله عليه وسلم ṣallā llāhu ʿalayhi wa-sallam

0
479

لوگ سارے تو تیرے شہر کے دیوانے ہیں

 میری خواہش ہے کہ میں تیرا زمانہ دیکھوں

 ریت پہنی ہوئی مکّہ کی گزرگاہوں پر

 نیچی نظروں سے تیرا غار میں جانا دیکھوں

 تیرے کمبل سے تیرے جسم کی خوشبو سونگھوں تجھ پہ اترا تھا جو حکمت کا خزانہ دیکھوں

 تیرے فاقوں نے کئی دن کی کڑی بھوک کے بعد ۔ ۔ فاطمہ (رضی اللہ عنہا) کو جو کھلایا تھا وہ کھانا دیکھوں

حکم اللہ سے اس رات کی خاموشی میں سوئے یثرب تجھے ہوتے میں روانہ دیکھوں

پائے صدیق کو جس سانپ نے بار بار ڈسا میں اسی سانپ کا گمنام ٹھکانہ دیکھوں

 دف بجاتے ہوئے ہاتھوں کی خوشی کو سمجھوں تیری آمد پہ وہ دربار سجانا دیکھوں

 جنگ خندق میں جو باندھے تھے وہ پتھر چوموں اور مصیبت میں تیرا ساتھ نبھانا دیکھوں

جاں کے دشمن تو نئے خوف سے تھرّائیں مگر معاف کرنے کا وہ انداز پرانا ديکھوں

 چشم اطہر کو خدایا وہ بصارت دے دے قبلہ رو ہو کے محمدﷺ کو روزانہ دیکھوں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here