کہو اب کیا ارادہ ہے

0
145

 

کہو اب کیا ارادہ ہے 

___ارے ہاں یار یاد آیا
کہ طے تو یہ بھی پایا تھا
کہ جس دن معرکہ ہوگا
تو اس سے ایک شب پہلے
میرے ہمراہ ہوکر میرے ایمان کے ساتھ
الہ العالمین کی بارگاہ میں ہاتھ اٹهاو گے
تم عبد اللہ کی سنت
سرمقتل نبھاؤ گے
میں کہتا جاؤنگا ‘آمیں’
ابی وقاص کی مانند
شہادت کی دعا تم اپنے لئے مانگے جاوگے
کہو گے اے میرے اللہ
کل جب معرکہ آئے
کسی مضبوط کافر سے
میرا ٹکراؤ ہو جائے
میں اس پر وار کر ڈالوں
مگر پھر زیر آجاوں
وہ مجھ کو یوں گرا ڈالے
میرے سینے پہ چڑھ دوڑے
میری گردن اڑا ڈالے
وہ میرے کان بھی کاٹے
میرا دل تک چبا ڈالے
میری آنکھیں نکالے اور
میرا مثلہ بنا ڈالے
تم اس سے مانگے جاوگے
میں کہتا جاؤنگا ‘ آمیں’
_ مگر جب کل کا دن آئے
تو میں نظریں چرا کر تم سے _ اک جانب نکل جاؤں
وہاں چپکے سے جاکر اپنے رب سے یہ دعا مانگوں
تمہارے نام کا یہ فال
میرے نام آجائے
دعا تو جو تم نے مانگی تھی
وہ میرے کام آجائے
میرا بھائی تو بچ جائے
میرا سر وہاں کٹ جائے
وہ اگلے مورچوں کے واسطے
کچھ اور ڈٹ جائے
میں اس کے پاس پہنچوں
میرا رب مجھ سے یہ پوچھے
تیرا یہ حال کیسا ہے؟
تیرے اعضاء پہ کیا بیتی؟
تیری آنکھیں کہاں پر ہیں؟
____ تو میں کہہ دوں میرے مالک
یہ تیرے نام سب کچھ ہے
یہ سب تیری امانت تھی
جو تجھ پہ وار آیا ہوں
کہ اپنی ذات کی خاطر
نہ تھی یہ دشمنی میری
میری کچلی ہوئی آنکھیں
میرا مسلا ہوا چہرہ
تو اپنے نور سے بھر دے
رضا دے رحمتیں دے دے
مجھے جنت میں وہ گھر دے
کہ جو ہمسائیگی ساقی چشمائے کوثر دے
اور ان سب نعمتوں کے بعد
اپنے دیدار کی یا رب_____ مجھے اپنے سعادت دے
کہ اپنے عرش کا سایہ
مجھے اپنی محبت دے
دعائیں جس کی مانگی تھی
محاذ جنگ پر جا کر
یہ دنیا کچھ کہے ہم کو اسی منزل پہ جانا ہے
اسی جنت کے چشموں کو اپنے آنکھوں میں بسانا ہے
میرے ایمان. کے ساتھی
حدیث دل یہ بھی سن لو
مجھے ڈر یہ بھی لگتا ہے
میرے ایمان کے ساتھی
تمہیں بہلا نہ دیں
یہ درہم و دینار کے دھندے
یہ ‘ اسٹیٹس’ کے خواب اور ‘وائٹ کالر جاب’ کے پھندے
یہ دنیا عیش و عشرت کا
جھوٹا لبادہ ہے
فقط جنت حقیقت ہے
یہ میرے رب کا وعدہ ہے
میرے ایمان کے ساتھی
کہو اب کیا ارادہ ہے ؟

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here