آٹھ ہزار میٹر سے بلند دنیا کے چودہ پہاڑ

0
371

آٹھ ہزار میٹر سے بلند دنیا کے چودہ پہاڑ
دنیا میں 8000 میٹر سے اونچے 14 پہاڑ ہیں۔ ان میں سے 8 نیپال میں 5 پاکستان میں اور 1 تبت (چین) میں ہے۔ 
ان میں 10 پہاڑ کوہ ہمالیہ اور 4 پہاڑ کوہ قراقرم میں واقع ہیں۔ کوہ ہمالیہ کے 10 میں سے 8 نیپال اور ایک ایک پاکستان و چین میں ہے۔ جبکہ کوہ قراقرم کے چاروں پہاڑ پاکستان میں ہیں۔ 
ان تمام 14 پہاڑوں کی مختصر معلومات اور ان کی بلندی طول بلد عرض بلد کیا ہے۔ سب سے پہلے کس نے کب سر کیا۔ اب تک کتنے کوہ پیما سر کرچکے ہیں اور کتنے کوہ پیما اپنی جانیں گنوا چکے ہیں۔

1- ماؤنٹ ایورسٹ۔ Mount Everest
دنیا کا سب سے اونچا پہاڑ ماؤنٹ ایورسٹ ہے۔ جس کی بلندی 8848 میٹر طول بلد 27.59.18 اور عرض بلد 86.55.33 ہے۔ ماؤنٹ ایورسٹ نیپال اور تبت کی سرحد پر واقع ہے اور دونوں طرف سے سر کیا جاسکتا ہے۔ ماؤنٹ ایورسٹ کو سب سے نیوزی لینڈ کے ایڈمنڈ ہلیری اور نیپال کے شرپا تنزنگ نورگے نے 29 مئی 1953 کو سر کیا تھا۔ ماؤنٹ ایورسٹ کو سردیوں میں پہلی بار 17 فروری 1980 میں پولش کوہ پیماؤں Krzysztof Wielicki اور Leszek Cichy نے سر کیا تھا۔ ایورسٹ کو اب تک 7001 کوہ پیما سر چکے ہیں جبکہ 223 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

2- کےٹو۔ K2
دنیا کا دوسرا اونچا پہاڑ کےٹو ہے کس کی بلندی 8616 میٹر طول بلد 35.52 عرض بلد 76.30 ہے۔ کےٹو پاکستان میں واقع ہے۔ کےٹو کو سب سے پہلے اٹلی کے Achille Compagnoni اور Lino Lacedelli نے 31 جولائی 1954 میں سر کیا تھا۔ کےٹو کو ابتک سردیوں میں سر نہیں کیا جاسکا۔ کےٹو کو اب تک 355 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 81 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

3- کنچن چنگا۔ Kanchenjunga
کنچن چنگا دنیا کا تیسرا اونچا پہاڑ ہے جس کی بلندی 8586 میٹر طول بلد 27.42 عرض بلد 88.08 ہے۔ کنچن چنگا نیپال اور انڈیا کی سرحد پر واقع ہے لیکن صرف نیپال کی طرف سے ہی سر ہوسکتا ہے۔ کنچن چنگا کو سب سے پہلے برطانیہ کے George Band اور Joe Brown نے 25 مئی 1955 کو سر کیا تھا۔ کنچن چنگا کو سردیوں میں پہلی بار 11 جنوری 1986 میں پولش کوہ پیماؤں Krzysztof Wielicki اور Jerzy Kukuczka نے سر کیا تھا۔ اب تک کنچن چنگا کو 332 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 40 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

4- لوٹسے۔ Lhotse
دنیا کا چوتھا اونچا پہاڑ لوٹسے ہے جس کی بلندی 8516 میٹر طول بلد 28.57 عرض بلد 86.56 ہے۔ لوٹسے نیپال اور تبت کی سرحد پر واقع ہے۔ لوٹسے کو سب سے پہلے برطانیہ کے Fritz Luchsinge اور Ernst Reissr نے 18 مئی 1955 کو سر کیا تھا۔ میں سر کیا تھا۔ لوٹسے کو سردیوں میں پہلی بار 31 دسمبر 1988 میں پولش کوہ پیما Krzysztof Wielicki نے سر کیا تھا۔ اب تک لوٹسے کو 604 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 13 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

5- مکالو۔ Makalu
دنیا کا پانچواں اونچا پہاڑ مکالو ہے جس کی بلندی 8485 میٹر طول بلد 27.53 عرض بلد 87.05 ہے۔ مکالو نیپال اور تبت کی سرحد پر واقع ہے۔ لوٹسے کو سب سے پہلے فرانس کے Jean Couzy اور Lionel Terray نے 15 مئی 1955 کو سر کیا تھا۔ لوٹسے کو سردیوں میں پہلی بار 9 فروری 2009 میں اٹلی کے کوہ پیما Simon More اور قازقستان کے Denis Urubko نے سر کیا تھا۔ اب تک مکالو کو 434 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 31 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

6- چویو۔ Cho Oyu
دنیا کا چٹھا اونچا پہاڑ چویو ہے جس کی بلندی 8188 میٹر طول بلد 28.05 عرض بلد 86.39 ہے۔ چویو نیپال اور تبت کی سرحد پر واقع ہے۔ چویو کو سب سے پہلے آسٹریا اور نیپال کے Josef Jöchler, Herbert Tichy, Pasang Dawa Lama نے 19 اکتوبر 1954 کو سر کیا تھا۔ چویو کو سردیوں میں پہلی بار 12 فروری 1985 کو پولینڈ کے Maciej Berbeka اور Maciej Pawlikowski نے سر کیا تھا۔ اب تک چویو کو 3331 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 44 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

7- دھولاگیری۔ Dhaulagiri
دنیا کا ساتوں اونچا پہاڑ دھولاگیری ہے جس کی بلندی 8167 میٹر طول بلد 28.41 عرض بلد 83.29 ہے۔ دھولاگیری نیپال میں واقع ہے۔ دھولاگیری کو سب سے پہلے مختلف ملکوں کی ایک مشترکہ ٹیم نے 13 مئی 1960 کو سر کیا تھا۔ جس میں ‏Kurt Diemberger، Peter Diener, Ernst Forrer, Albin Schelbert, Nawang Dorje Nima Dorje شامل تھے۔
دھولاگیری کو سردیوں میں پہلی بار 21 جنوری 1985 کو پولینڈ کے Andrzej Czok اور Jerzy Kukuczka نے سر کیا تھا۔ دھولاگیری کو 469 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 69 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

8- مناسلو۔ Manaslu
دنیا کا آٹھواں اونچا پہاڑ مناسلو ہے جس کی بلندی 8163 میٹر طول بلد 28.33 عرض بلد 84.33 ہے۔ مناسلو نیپال میں واقع ہے۔ مناسلو کو سب سے پہلے جاپان اور نیپال کے

۔Toshio Imanishi, Gyalzen Norbu نے 9 مئی 1956 کو سر کیا تھا۔ مناسلو کو سردیوں میں پہلی بار 12 جنوری 1986 کو پولینڈ کے Maciej Berbeka اور Ryszard Gajewski نے سر کیا تھا۔ اب تک مناسلو کو 903 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 65 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

9- نانگاپربت۔ Nanga Parbat
نانگا پربت دنیا کا نواں اونچا پہاڑ ہے جس کی بلندی 8126 میٹر طول بلد 35.14 عرض بلد 74.35 ہے۔ نانگاپربت پاکستان میں واقع ہے۔ نانگا پربت کو سب سے پہلے جرمنی کے Hermann Buhl نے 3 جولائی 1953 کو سر کیا تھا۔ نانگاپربت کو سردیوں میں پہلی بار 26 فروری 2016 میں اٹلی کے کوہ پیما Simon More پاکستان کے علی صدپارہ اور سپین کے Alex Txikon نے سر کیا تھا۔ نانگا پربت کو 335 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 68 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

10- ایناپرنا۔ Annapurna
دنیا کا دسواں اونچا پہاڑ ایناپرنا ہے جس کی بلندی 8091 میٹر طول بلد 28.35 عرض بلد 83.49 ہے۔ ایناپرنا نیپال میں واقع ہے۔ مناسلو کو سب سے پہلے فرانس کے Maurice Herzog اور Louis Lachenal نے 3 جون 1950 کو سر کیا تھا۔ ایناپرنا کو سردیوں میں پہلی بار 3 فروری 1987 کو پولینڈ کے Jerzy Kukuczka اور Artur Hajzer نے سر کیا تھا۔ اب تک ایناپرنا کو 211 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 61 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

11- گاشربرم ون۔ Gasherbrum 1۔
گاشربرم دنیا کا گیارہواں اونچا پہاڑ ہے جس کی بلندی 8080 میٹر طول بلد 35.43 عرض بلد 76.41 ہے۔ گاشربرم ون پاکستان میں واقع ہے۔ گاشربرم ون کو سب سے پہلے امریکہ کے Andrew J. Kauffman اور Peter K. Schoening نے 5 جولائی 1958 کو سر کیا تھا۔ گاشربرم ون کو پہلی بار سردیوں میں 9 مارچ 2012 کو Adam Bielecki اور Janusz Golab نے سر کیا تھا۔ گاشربرم ون کو 334 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 29 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

12- براڈ پیک۔ Broad Peak
براڈ پیک دنیا کا بارہواں اونچا پہاڑ ہے جس کی بلندی 8051 میٹر طول بلد 35.48 عرض بلد 76.34 ہے۔ براڈ پیک پاکستان میں واقع ہے۔ براڈ پیک کو سب سے پہلے آسٹریا کے Hermann Buhl, Kurt Diemberger, Marcus Schmuck, Fritz Wintersteller نے 9 جون 1957 کو سر کیا تھا۔ براڈ پیک کو پہلی بار سردیوں میں 5 مارچ 2013 کو پولینڈ کے Maciej Berbeka, Adam Bielecki, Tomasz Kowalski, Artur Małek نے سر کیا تھا۔ براڈ پیک کو اب تک 404 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 21 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

13- گاشربرم ٹو۔ Gasherbrum 2۔
گاشربرم ٹو دنیا کا تیرہواں اونچا پہاڑ ہے جس کی بلندی 8035 میٹر طول بلد 35.45 عرض بلد 76.39 ہے۔ گاشربرم ٹو پاکستان میں واقع ہے۔ گاشربرم ٹو کو سب سے پہلے آسٹریا کے Josef Larch, Fritz Moravec, Johann Willenpart نے 7 جولائی 1956 کو سر کیا تھا۔ گاشربرم ٹو کو پہلی بار سردیوں میں 2 فروری 2011 کو اٹلی کے Simone Moro اور قازقستان کے Denis Urubko اور امریکہ کے Cory Richards نے سر کیا تھا۔ گاشربرم ون کو 930 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 21 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

14- شش پنگماں۔ Shish Pangma۔
دنیا کا چودہواں اور آخری 8000 میٹر اونچا پہاڑ شش پنگماں ہے جس کی بلندی 8027 میٹر طول بلد 28.33 عرض بلد 84.33 ہے۔ شش پنگماں تبت میں واقع ہے۔ شش پنگماں کو سب سے پہلے چین کے Hsu Ching, Chang Chun-yen, Wang Fu-zhou, Chen San, Cheng Tien-liang, Wu Tsung-yue, Sodnam Do نے 2 مئی 1964 کو سر کیا تھا۔ شش پنگماں کو سردیوں میں پہلی بار 14 جنوری 2005 کو پولینڈ کے Piotr Morawski اور اٹلی کے Simon More نے سر کیا تھا۔ اب تک شش پنگماں کو 302 کوہ پیماؤں نے سر کیا ہے۔ جبکہ 25 کوہ پیما سر کرتے ہوئے یا واپس آتے ہوئے ہلاک ہوچکے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here