دلچسپ و عجیب

0
487

دلچسپ و عجیب

آکسفورڈ یونیورسٹی انگلینڈ میں ایک ایسی گھنٹی بھی موجود ہے جو کہ تقریباً 180 سال سے مسلسل بجتی چلی آرہی ہے.

اس تجرباتی الیکٹریکل گھنٹی کو 1840 میں سیٹ کیا گیا تھا اور یہ گھنٹی تب سے مسلسل بجتی چلی آرہی ہے اس گھنٹی نے مسلسل بجتے ہوئے ابھی تک تین صدیاں دیکھ لی ہیں آپ سوچ رہے ہونگے ایسی مسلسل بجنے والی گھنٹی وہاں موجود لوگوں کیلئے پریشانی کا باعث بنتی ہوگی تو یہ جان لیں ایسا بالکل بھی نہیں ہے وہ گھنٹی شیشے کی دو سطحوں کی پیچھے موجود ہے جس کی وجہ سے وہ قابل سماعت نہیں رہتی.

اس کو مسلسل بجتے رہنے کا ذمہ دار اس کا ڈائزئن ہے جو دو ڈارئی بیٹریز پر مشتمیل ہے اور دونوں بیٹریز کہ نیچے Brass کی بنی ہوئی گھنٹیاں لگی ہوئی ہیں4mm قطر کا Clapper دونوں گھنٹیوں کہ درمیان پنڈولیم کی طرح لٹک رہا ہے

یہ گھنٹی مسلسل کام کرنے کیلئے الیکٹروسٹیٹک قوت کا سہارا لے رہی ہے جب یہ Clapper ایک گھنٹی سے ٹکراتا ہے تو اُس کی بیٹری کی مدد سے چارج ہوجاتا ہے اور ایک جیسا چارج ہونے کی وجہ سے clapper مخالف سمت میں دھکیلا جاتا ہے دوسری گھنٹی سے چارج مختلف ہونے کی وجہ سے کشیش پیدا ہوتی ہے اور دوسری گھنٹی سے ٹکرانے پر دوبارہ چارج ہوجاتا ہے اور یہ عمل 1840 سے ایسے ہی چلا آرہا ہے اور اس کی Oscillation frequency 2Hz ہے
اور اس سسٹم میں موجود بیٹریز کی Composition کہ بارے میں وثوق سے نہیں کہاجا سکتا کیونکہ اس Apparatus کہ ساتھ کسی قسم کی چھیڑ چھاڑ اسے گھنٹی کو متاثر کرسکتی ہے پر یہ گمان ہے کہ یہ بیٹری بھی اُس وقت بنائی جانے والی بیٹریز سے مماثلت رکھتی ہوگی
ان کی سلفر کی مدد کوٹنگ کی گئی ہے اور اندر موجود بیٹری Zamboni piles ہو سکتی ہے

جو کہ سلور اور زنک کی بنی ہوتی ہیں سلور ڈسک جس کی ایک طرف زنک کی پتلی سے لئیر بنی ہوتی ہے جبکہ دوسری طرف manganese oxide اور شہد کی کوٹنگ موجود ہوتی ہے اور اس ڈسک کا قطر 20mm ہوتا ہے اور Zamboni بیٹری ایسی ہزاروں ڈسکس پر مشتمیل ہوسکتی ہے

oxford electric battery video :

https://youtu.be/1Dx1-f8xQio

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here