Shayer or Mehbooba Urdu Joke 

0
175

Shayar or Mehbooba Urdu Joke 

شاعر اور محبوبہ

ایک شاعر كو اپنی محبوبہ سے ملے ھوئے دس باره سال ھو چكے تھے !

محبوبہ كی ياد آئی تو پتہ پوچھتے پوچھتے ملنے جا پہنچے .

محبوبہ نے عليک سليک كے بعد بٹھايا اور پوچھا كيسے آنا ھوا شاعر صاحب ؟

شاعر ؛ چہره چاند ديكھنے چلے آئے ھيں !

محبوبہ ؛ چاند بيٹا ديكھو كون ملنے آيا .

شاعر صاحب كھسيانے ھو گئے بولے نہيں ميں تو وه من موھنی مسكان ديكھنے كو آنكھيں ترس گئيں تھيں ؛

محبوبہ ؛ او اچھا ايک منٹ ، موھنی بيٹا ادھر اور اپنی آپی مسكان كو بھی بلا لاؤ پڑوس سے …

شاعر صاحب كا گلا خشک ھو گيا بس ھمارا دل بڑا مضطر تھا اپنے گوھر ناياب كی ياد ميں چلا آيا .

محبوبہ ؛ جی وه گوھر اور ناياب تو اپنی نانی كے گھر گئ ھوئی ھيں .

شاعر صاحب كو چكر سا آيا ھمت كر كے كہنے لگے نا چيز اجازت چاھے گا بس ديدار و گلريز كے ليے آيا تھا .

محبوبہ ؛ شاعر صاحب كيا بتاؤ ان دونوں نے تو ناک ميں دم كيا ھوا ھے بيٹھيے ابھی بلاتی ھوں 

شاعرصاحب ؛ دل تھام كر بولے ميری طبعيت بوجھل ھو رھی طبيب كو بلوا ديجيئے .

محبوبہ ؛ اوئے طبيب بيٹا ادھر آؤ آپ كو ماموں بلا رھے ھيں

شاعر صاحب كومے ميں ھيں دعاؤں كی التجا ھے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here