Isne Maktoob Mein Likha Hai

0
340

Is ne maktoob mein likha hai urdu Ghazal by Mohsin Naqvi

غزل

اس نے مکتوب میں لکھا ہے کہ مجبور ہیں ہم
اور بانہوں میں کسی اور کی محصور ہیں ہم
ایک ساعت بھی شبِ وَصل کی بھولی نہ ہمیں
آج بھی تیری ملن رات پہ مجبور ہیں ہم

چشمِ تر قَلب حزیِں آبلہ پاؤں میں لئے
تری الفت سے ترے پیار سے معمور ہیں ہم
انکی محفل میں ہمیں اِذنِ تکّلم نہ ملا
ان کو اندیشہ رہا سرمد و منصور ہیں ہم

یوں ستاروں نے سنائی ہے کہانی اپنی
گویا افکار سے جذبات سے محروم ہیں ہم
تیرا بیگانوں سا ہم سے ہے رویہ محسن
باوجود اس کے ترے عشق میں مشہور ہیں ہم

محسن نقوی 

Ghazal

Is nay maktoob main likha hai k majboor hain hum
Aur banhoon main kisi aur ki mehsoor hain hum

Aik saat bhi shab-e-wsal ki bhuli na humein
Aaj bhi teri Milan rat pe majboor hein hum

Chashm-e- tar qalb Hazeen aabla paon main liye
Teri ulfat say tere payar say maamoor hain hum

In ki mehfil main humain izn-e- takalum na mila
In ko andaisha raha sarmdo mansoor hein hum

Youn sitaaroon ne sunai hai kahani apni
Gooya afkar say jazbaat se mehroom hein hum

Tera begaanoon sa Hum say hai rawayya Mohsin
Bewajood is k tere ishq main meshoor hein hum
Mohsin Naqvi

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here