Ankahi Urdu Story

0
228

Ankahi Beautiful Heart Touching Urdu Story 

اَن کہی

وہ اپنا سب کچھ کھو چُکی تھی،
وہ سکون، خوشیاں ،وہ معصوم ہنسی ،
کچھ بھی تو نہیں تھا اُس کے پاس ، 
اگر کچھ تھا تو وہ تھاتلخ یادوں کا سلسلہ،
کچھ ازیتیں ،اور اپنی ہی ازیتوں پر بہنے والے آنسوں ، 
ذندگی کی بھول بھلیوں میں وہ لڑکھڑاتے قدموں سے ،
زہنی تکلیفوں سے نجات پا کر،
اُن دکھوں کی دلدل سے نکل کر ، 
جب وہ اپنی ذندگی سے ملی، 
تو اُسے جینے کا مقصد ملا، 

جہاں وہ اپنے محبوب کے ہمرا ہ ایک خوبصورت سفر کا آغاز کرنے جارہی تھی ، 
لیکن ، 
وہ ڈری ہوئی تھی، 
وہ سہمی ہوئی تھی ،
اُس کے دل میں اَن گنت سوال تھے ،
جو اُس کے من کو ہر وقت اُلجھائے رکھتے تھے،
کہیں نہ کہیں آج بھی اُس کے ماضی کا ایک بھیانک باب کھُلا تھا، 
جو یوں ہی تنہائی میں آکر اُس کا مذاق اُڑاتا ، 
اور وہ پھر سے ٹوٹ کر ریزہ ریزہ ہوجاتی ، 

شائد ۔۔۔ وہ آج بھی خود کو اُن زہنی و جسمانی ازیتوں کے بیچ تصور کرتی ، 
اور اُس درندہ صفت انسان کی چیخیں آج بھی اُس کے کانوں میں گو نجتیں ،
تو اُس کا دل لرز جاتا ، 
اُس درندے کی وحشیانہ حرکتیں ،
اُس معصوم کی روح تک کو جھلسا دیتیں، 
اور انہی اُلجھی ہوئی سوچوں کے بوجھ تلے،
کئی بار وہ اکیلے میں رو دیا کرتی، 
اور بکھر کر رہ جاتی،
اور اب وہ،

مسلسل ازیتوں کے سفر سے تھک کر ، 
اپنی زات کی تکمیل چاہتی ہے،
اپنے محبوب ، اپنے مجازی خدا کے ساتھ ، 
جو اُس کی کُل کائنات ہے،
دل میں اِک نئی اُمید لیئے ، 
وہ اپنی اُلجھنوں کو سلجھا رہی ہے ، 
کہ شائد ۔۔۔ اب انہی راستوں پر خوشیاں اُس کی منتظر ہوں ، 
اور ایک بار پھر سے وہ کھُل کر جی سکے ۔ 

تحریر: پرھ اعجاز، کراچی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here