Umeed ki Kiran

0
688

Umeed ki Kiran rooz aati hai beautiful heart touching urdu ghazal by Tabinda Jabeen

غزل

امید کی کرن روز آتی ہے
یہ کچھ کہتی نہیں مگر

اپنے جلوہ سے روشنی بھرتی ہے
یہ آنکھوں سے اشک کو دور کرتی ہے

خاموشی دل کی چیردیتی ہے
کسی کے آہت کے جمبش سے 

ممکن نہیں ہوتا یہ ہوجائے مدھم
اسے خود کی خودی پے یقین ہوتا ہے

یہ چراغ کو بھی روشنی بخشتی ہے
ہزاروں مدھاہیں اس کے منتظر ہوتے ہے

کسی کے دل کو کبھی شکست پاہ ہونے نہیں دیتی
امید کی کرن روز آتی ہے

ازقلم :تابندہ جبیں 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here