Khud Shanasi -خود شناسی Urdu Ghazal

0
608

Khud Shanasi Urdu Ghazal by Pireh Aijaz 

خود شناسی

اِک طویل مدت بعد ، 
آج خودشناسی کے عمل سے گزر رہی ہوں ، 
زندگی کی کتاب کا ہر اِک باب کھو ل رہی ہوں، 

ہر ورق پلٹ کر دیکھا تو یہ احساس ہوا، 
آج خود کو پہچان کر یہ انکشاف ہوا ، 

کہ دل آج بھی درد سے خالی نہیں ہے، 
ذہن پر کچھ اُلجھی ہوئی سوچوں کا بسیرا ہے ،

آنکھیں اداسی کے سمندر سے اشکبار ہیں ،
باطن آج بھی مایوسی کی گرد سے اَٹا ہوا ہے ، 

مسکراہٹ بھی اب مدھم ہو چکی ہے ، 
غم سے نڈھال یہ وجود اب ٹوٹ سا گیا ہے، 

اِ ن معصوم آنکھوں کے گرد اب سیاہ حلقے پڑ گئے ہیں ، 
اب کچھ خواب مُرجھا سے گئے ہیں، 

اور ازیتیں بھی بے شمار ہیں ، 
اب کچھ بے ربط سی باتیں ہیں ، 

کچھ اَن کہے جذبات ہیں ، 
کچھ ادھوری خواہشات کا ذخیرہ ہے، 

ہر سمت پھیلا ہوا انتشار ہے ،
کبھی نہ ختم ہونے والا انتظار ہے ۔ 

تحریر : پرھ اعجاز, کراچی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here