Lakhoon Main Aik

0
156

Lakhoon Main Aik Urdu Sufi Ghazal by Tabinda Jabeen 

وہ کہتا میں لاکھوں میں ایک ہوں
ارے ناداں دیکھ تو ذرا میں بھی انمعول ہو

تو نے سمجھی نہیں محبت کی جادوگری
رقص کرتے پھریں ۔۔۔سدا دیتے رہے

محبت اگر خدا سے ہو
تو نظر آتی ہے ہر طرف اس کی جلوہ گری

اگر ہوجائے محبت خدا کے بندے سے
انسان خود کو مقام سے گڑا پھڑتا ہے

روزوشب لوگوں کو روٹھے ہوئے دیکھا ہے
بات تو تب ہے عظيم تر جب کوئی روٹھے کو منا پائے

میرے ہمدم میرے دوست بات یہ میری مانو
غیب کی باتیں بس ذات خدا تک اچھی جانو

مٹی کے سب انسان ہے۔
دوسرے سے پہلے جھکنا جانو

ازقلم :تابندہ جبیں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here